تازہ ترین
Home / ورلڈ / لاچار شامی لڑکیوں کو ہوٹل میں نوکری کا جھانسہ دےکر کیا کرایا جاتاہے ؟ جان کر آپکی روح کانپ اٹھے

لاچار شامی لڑکیوں کو ہوٹل میں نوکری کا جھانسہ دےکر کیا کرایا جاتاہے ؟ جان کر آپکی روح کانپ اٹھے

life of syrian girls

صنعا : (گیٹ نیوز ) شام میں خانہ جنگی نے شہریوں کی زندگی اجیرن کر دی ہے اور لاکھوں افراد نے تباہ کن صورتحال دیکھتے ہوئے دوسرے ممالک میں جانا ہی بہتر سمجھا ہے اور اسی طرح لاکھوں کی تعداد میں شامی خواتین نے بھی دوسرے ممالک کا رخ کیا جہاں انہیں کئی قسم کی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تاہم سب سے بڑی مشکل انہیں نوکریوں کا جھانسہ دےکر ایسے کام کرنے پر مجبور کرنا ہے جس کا انہوں نے سوچا بھی نہیں تھا۔تفصیلا ت کے مطابق جنگ سے تباہ حال شام کی ان نوجوان لڑکیوں کو یقین دلایا گیا کہ انہیں لبنان اور دوسرے ممالک کے اچھے ہوٹلوں میں اچھی تنخواہوں پر ملازمت فراہم کی جا رہی ہے۔ ان میں زیادہ تر وہ لڑکیاں شامل ہیں، جن کے والد یا بھائی جنگ میں مارے گئے تھے۔ جونہی یہ لڑکیاں لبنان پہنچی تو ان کی سفری دستاویزات اور موبائل چھین لیے گئے۔ ان لڑکیوں کو بیروت کے شمال میں واقع ہوٹلوں میں بند کر دیا گیا اور انہیں جسم فروشی پر مجبور کیا گیا۔ اس کے بعد ان میں سے جس لڑکی نے بھی ایسا کرنے سے انکار کیا، اسے مارا پیٹا گیا، تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور ان کی برہنہ تصاویر بھی بنائی گئیں۔ یہ سلسلہ مارچ کے اوآخر میں اس وقت تک جاری رہا، جب تک لبنانی فورسز نے چھاپہ مار کارروائیاں کرتے ہوئے ان دونوں ہوٹلوں میں قید درجنوں شامی لڑکیوں کو آزاد کروایا۔ بتایا گیا ہے کہ اس کاروبار میں ایک پورا گروپ شامل تھا، جو انتہائی منظم انداز میں یہ کام جاری رکھے ہوئے تھا۔ مایا العمر متاثرہ خواتین سے مل بھی چکی ہیں اور بعض خواتین نے ان کو بتایا کہ انہیں ایک ہی دن میں بیس بیس گاہکوں سے جنسی تعلق قائم کرنے پر مجبور کیا جاتا تھا۔ لبنان میں پہلے ہی ایک ملین سے زائد شامی مہاجرین موجود ہیں جبکہ اس کیس کی تیز تر تفتیش کے لیے بھی عوامی دباو¿ بڑھتا جا رہا ہے۔ ان چھاپوں کے دوران 75 متاثرہ خواتین کو آزاد کروایا گیا ہے اور اپنی نوعیت کے لحاظ سے یہ لبنان کو اب تک کا سب سے بڑا سیکس اسکینڈل ہے۔ نیوز ایجنسی اے پی کی اطلاعات کے مطابق جس وقت ان خواتین کو بازیاب کروایا گیا تو ان کی حالت انتہائی مخدوش تھی اور چیس مورس نامی ہوٹل ایک ریسٹ ہاو¿س سے زیادہ ایک جیل لگتی ہے۔ اسمگلر متاثرہ لڑکیوں کے خاندانوں کی مخدوش صورتحال سے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ ان لڑکیوں کی کہانیاں کسی خوفناک فلم سے کم نہیں ہیں۔“

 

سابقہ پوسٹ
اگلی پوسٹ

Check Also

Italy tourism destinations

عوام خوشی سے جھوم اٹھے،18سال کا ہوتے ہی مالا مال ہو جائیں گے

نیو یارک۔(گیٹ نیوز) ترقی یافتہ اور ترقی پذی ممالک میں بڑا فر ق وہاں کی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.